اعلیٰ کوالٹی کی روئی کے بھاؤ میں فی من 200 روپے کا اضافہ

مقامی کاٹن مارکیٹ میں گزشتہ ہفتہ روئی کا بھاؤ مستحکم رہا، اعلیٰ کوالٹی کی روئی کے بھاؤ میں فی من 200 روپے کا اضافہ ہوا تاہم کاروباری حجم کم رہا۔

روئی کے بھاؤ میں استحکام رہنے کی وجہ بین الاقوامی کاٹن مارکیٹوں خصوصی طور پر نیویارک کاٹن کے بھاؤ میں فی پاؤنڈ 5 تا 5.30 امریکن سینٹ کا اضافہ ہوا، بھارت میں بھی روئی کا بھاؤ فی کینڈی (356 کلو) کا بھاؤ 300 تا 400 روپے بڑھ گیا جبکہ چین میں نئے سال لیونر کی طویل تعطیلات کے بعد روئی کا بھاؤ مستحکم رہا۔

کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ میں 100 روپے کی کمی کرکے اسپاٹ ریٹ فی من 6900 روپے کے بھاؤ پر بند کیا، صوبہ سندھ و پنجاب میں روئی کا بھاؤ فی من 5800 تا 7300 روپے رہا جبکہ پھٹی کا بھاؤ فی 40 کلو 2400 تا 3000 روپے رہا، گو کہ پھٹی قلیل مقدار میں دستیاب ہے۔

کراچی کاٹن بروکرز فورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کی مصنوعات کی برآمد میں 14 فیصد اضافہ اور روئی کے بھاؤ میں بہتری کے باعث مقامی کپڑے اور یارن مارکیٹ میں پوچھ گچھ شروع ہوگئی ہے جہاں پہلے خاموشی کا عالم تھا۔

دریں اثنا پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن نے 15 فروری تک ملک میں کپاس کی پیداوار کے اعداد و شمار جاری کیا ہے جس کے مطابق اس عرصے تک ملک میں روئی کی پیداوار ایک کروڑ 15 لاکھ ہوئی جو گزشتہ سال کی اسی عرصے کے نسبت سات آٹھ فیصد زیادہ ہے۔

نسیم عثمان کے مطابق اس سال ملک میں روئی کی کل پیداوار ایک کروڑ 16 لاکھ گانٹھوں کے لگ بھگ ہونے کی توقع ہے جبکہ ملوں نے بیرون ممالک سے تاحال روئی کی تقریبا 25 لاکھ گانٹھوں کے درآمدی معاہدے کرلئے ہیں جس کی ڈلیوری شروع ہوگئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں