امریکا کا ایک بار پھر ترکی سے کرد ملیشیا کے تحفظ کا مطالبہ

واشنگٹن: امریکا نے ایک بار پھر ترکی سے شام میں موجود کرد ملیشیا کے تحفظ کا مطالبہ کر دیا ہے، گزشتہ روز ترک صدر اردگان نےامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو کرد ملیشیا کے زیر انتظام منبیج نامی شامی قصبے کے سیکورٹی انتظامات سنبھالنے کی پیشکش کی تھی۔

امریکا کے شام سے فوجی انخلاء کا فیصلہ پیچیدگیوں کا شکار ہو گیا ہے، امریکا نے ایک بار پھر ترکی سے شام میں موجود کرد ملیشیا کے تحفظ کی ضمانت مانگ لی۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیونے اپنے ترک ہم منصب میولت کاوس اوغلوسے ٹیلی فونک گفتگو میں کہا کہ امریکا کے لیے اپنے شامی اتحادیوں کی حفاظت کلیدی حیثیت رکھتا ہے، ساتھ ہی امریکا نے ترکی کے شامی بارڈر کی طرف سے لاحق سیکورٹی خدشات کو دور کرنے کی بھی یقین دہانی کروائی ہے۔

جبکہ گزشتہ روز ترک صدر اردگان نے صدر ٹرمپ کو کردوں کے زیر انتظامشامی شہر منبیج کے سیکورٹی انتظام سنبھالنے کی بھی پیشکش کی تھی۔

چند روز قبل منبیج میں امریکی قافلے پر فوجی حملہ ہوا تھا جس میں چار امریکی فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں