’’بلاول بچہ ہے، بچ کر کھیلے‘‘

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کہتے ہیں کہ بلاول بچہ ہے، بچ کر کھیلے یہ نہ ہو کہ اس کی سیاسی موت واقع ہو جائے۔

وزیرریلوے نے پریس کانفرس کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی اور نون لیگ دونوں کو ضمانت کی ضرورت ہے، پیپلز پارٹی میں کائرہ، چانڈیو، اعتزاز جیسے اچھے لوگ بھی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون دونوں کو ضمانت کی ضرورت ہے، دو ماہ سے ایک ہی جگہ سوئی پھنسی ہے، انہیں اسپتال کی بیڈ شیٹ سے بو آتی ہے۔

وزیر ریلوے نے کہا کہ کسی کے نٹ بولٹ دبئی میں، کسی کے لندن میں پڑے ہیں، انجن دھواں دے رہا ہے، یہاں کے مکینک انہیں پسند ہی نہیں آ رہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ شہباز شریف کو میں نے این آر او مانگتے سنا اور دیکھا ہے،وہ وکٹ کے دونوں جانب کھیل رہے ہیں،شہباز شریف نے اپنے لیے این آر او لیا یا نہیں، یہ نہیں جانتا۔

شیخ رشید نے کہا کہ عمران خان کے پاس ڈیل اور ڈھیل کی کوئی گنجائش نہیں، شہباز شریف نے خود کو نوازشریف کی سیاست سے دور کر رکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی مدرسوں کو پاکستان کا قلعہ سمجھتا ہوں، مجھے فخر ہے، میں جہاد پر یقین رکھتا ہوں، دہشت گردی کے سختی سے مخالف ہیں۔

شیخ رشید کا کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ میں پیش آئے واقعے کی مذمت کرتے ہیں،سانحہ کرائسٹ چرچ میں بہادری دکھانے والے پاکستانیوں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں۔

وفاقی وزیر ریلوے نے کہا کہ جس اسٹیشن سے ہمیں 50یا 25 سواریاں بھی ملیں وہاں ٹرین رکے گی، راولپنڈی سے لاہور کے لیے سرسید ایکسپریس چلے گی۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ملک بھر میں ٹریک بدلنے کے لیے ٹینڈر لگادیے ہیں، چین سے ایم ایل ون کا معاہدہ ہوا تو کنٹریکٹ کی بنیاد پر ایک لاکھ افراد کو روزگار مل سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں