بھارت کو افغانستان میں امریکی شکست سے سبق سیکھنا چاہیے :حافظ محمد سعید

امیر جماعۃ الدعوۃ حافظ سعید نے کہا ہے کہ بھار ت کو افغانستان میں امریکی شکست سے سبق سیکھنا چاہیے ۔

امیر جماعۃ الدعوۃ نے کہا کہ امریکہ خطہ سے نکل رہا اور کشمیر کی آزادی کا وقت قریب آرہا ہے۔ موجودہ نصف صدی کی صلیبی جنگ اختتام پذیر ہو رہی ہے۔ افغان جنگ نے روس کی طرح امریکی معیشت کو بھی تباہی سے دوچار کر دیا۔ کفر سمٹ رہا اور مسلم امہ مضبوط قوت بن کر ابھر رہی ہے۔ مسلم حکمران بیرونی قوتوں کی ذہنی غلامی سے نکلیں اور آزادی سے فیصلے کریں۔ امریکہ کے افغانستان اور شام سے نکلنے پر نئی منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔ پاکستان جلد عالم اسلام کی مضبوط قوت بن کر ابھرے گا۔

جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ کے دوران ہزاروں افراد کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے حافظ محمد سعید نے کہاکہ امریکی صدر ٹرمپ نے اپنی تقریر میں وہ باتیں کی ہیں جو ہم پچھلے کئی برسوں سے کرتے آرہے ہیں۔ افغانستان سے اپنی فوجوں کی باعزت واپسی کیلئے پاکستانی حکومت سے رابطے کئے جارہے ہیں۔ وہ شام سے بھی اپنی فوج نکال رہا ہے۔

امیر جماعۃ الدعوہ نے کہا کہ ٹرمپ نے واضح طور پر اعتراف کیا ہے کہ روس کی طرح اسے بھی افغانستان سے کچھ حاصل نہیں ہوا۔ آج وہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی یہ کہنے پر مجبور ہوا ہے کہ ہم تمہاری خواہش پر خطہ میں مزید رہتے ہوئے اپنے فوجی کیوں مروائیں؟ اور یہ کہ جتنے پیسے تم افغانستان میں خرچ کر کے جتلاتے ہو وہ تو امریکہ پانچ گھنٹے میں اپنی فوج پر خرچ کر دیتا ہے۔ امریکہ کو شکست آسمانوں سے ہوئی ہے۔

حافظ محمد سعید نے کہاکہ حکمران آئی ایم ایف سے قرضے لینے کے سلسلے ختم کریں اور نئے حالات کے تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے پالیسیاں ترتیب دیں۔ صلیبی جنگوں کی طرح برصغیر کی بھی عظیم تاریخ ہے۔ اس وقت کرنے کا کام یہ ہے کہ قائد اعظم اور علامہ اقبال نے جس نظریہ کو عملی جامہ پہنایاآج پھر اسی نظریہ پاکستان کو پروان چڑھانے اور کلمہ طیبہ کے نفاذ کی ضرورت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں