توہین عدالت؛طلال چودھری پرفرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ

سپریم کورٹ نے وزیرمملکت داخلہ طلال چودھری پر توہین عدالت کیس میں فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ طلال چودھری پر 14مارچ کو فرد جرم عائد کی جائیگی۔ عدالت نے طلال چودھری کو ذاتی طور پر پیش ہونے کی ہدایت کردی۔

طلال چودھری کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی، جسٹس فیصل عرب اور جسٹس مقبول باقر بھی بینچ کا حصہ ہیں۔

طلال چودھری کے وکیل کامران مرتضی نے عدالت کو بتایا کہ انہیں سی ڈی تاخیر سے فراہم کی گئی، اٹارنی جنرل آفس نے وقت پر سی ڈی فراہم نہیں کی۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل رانا وقار نے کامران مرتضیٰ کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کامران مرتضیٰ کے آفس سے وقت پر رابطہ کیا گیا تھا۔

کامران مرتضیٰ نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ ٹرانسکرپٹ اور سی ڈی میں فرق ہے، عدالت نے ہدایت کی کہ طلال چودھری نے اپنے جواب میں جواضافہ کرنا ہے آئندہ سماعت پر کرلیں۔

عدالت نے طلال چوہدری کو طلب کرتے ہوئے فرد جرم کی کارروائی 14مارچ تک ملتوی کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں