جعلی اکاؤنٹس کیس: سپریم کورٹ فیصلے پر نظر ثانی کرے‘ مراد علی شاہ

کراچی: وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے عدالت عظمیٰ کی جانب سے جعلی اکاؤنٹس کیس میں اپنا اور بلاول بھٹو زرداری کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے ساتھ کیس کو نیب کے حوالے کرنے کا حکم چیلنج کردیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے نظر ثانی اپیل دائر کی گئی ہے جس میں وفاق، نیب اور جے آئی ٹی کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے جعلی اکاؤنٹس کے معاملے کی تحقیقات کرنی تھی تاہم جے آئی ٹی میرے خلاف جعلی اکاؤنٹس ٹرانزیکشنز میں ملوث ہونے کا ثبوت نہیں لا سکی۔
نجی ٹی وی کے مطابق درخواست میں کہا گیا ہے کہ سندھ اسمبلی نے شوگر ملز کو سبسڈی کی منظوری دی اور سبسڈی دینے کی قرار داد پی ٹی آئی کے خرم شیر زمان کی جانب سے پیش کی گئی تھی۔ مقدمے کو کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنے کا کوئی جواز نہیں۔ عدالت کے تحریری فیصلے میں جے آئی ٹی رپورٹ سے نام نکالنے کے زبانی حکم کو شامل نہیں کیا گیا، معاملے پر عمل در آمد بینچ تشکیل دینے کا بھی جواز نہیں تھا لہٰذا سپریم کورٹ فیصلے پر نظر ثانی کرے ۔
دوسری جانب پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف زرداری نے سپریم کورٹ میں نظر ثانی کیس کی جلد سماعت کے لیے درخواست دائر کردی۔ جلد سماعت کی درخواست ایڈووکیٹ لطیف کھوسہ اور شہباز کھوسہ کی جانب سے دائر کی گئی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ انصاف کے تقاضوں کے پیش نظر نظر ثانی کو 12 فروری کو سماعت کے لیے مقرر کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں