سینیٹ کے غیر حتمی نتائج ،ن لیگ آگے

سینیٹ الیکشن کا میدان ن لیگ نے مار لیا ہے،اور ابتدائی نتائج کے مطابق غیر سرکاری نتائج کے مطابق پنجاب سے مسلم لیگ (ن)کے 11 امیدواروں نے کامیابی حاصل کرلی ہے، جس میں سینیٹر مشاہد حسین اور عبدالکریم بھی شامل ہیں۔

ن لیگ کے امیدواران نےسینیٹ میں کامیابی بحیثیت آزاد امیدوارحاصل کی ۔قومی سمیت چاروں صوبائی اسمبلیوں میں سینیٹ انتخابات کے لیے ہونے والی پولنگ کا وقت ختم ہوچکا ہے اور اب گنتی کا عمل جاری رہی ۔

سینیٹ کی 52 نشستوں پر 131 امیدواروں نے حصہ لیا، پولنگ بغیر کسی وقفے کے شام 4 بجے تک جا ری ہی ۔سیکریٹری الیکشن کمیشن نے چاروں صوبائی اسمبلیوں اور قومی اسمبلی میں پولنگ انتظامات پر اطمینان کا اظہارکیا اور کہاکہ کہیں سے ہارس ٹریڈنگ کی کوئی شکایت نہیں ملی۔

سینیٹ الیکشن میں پہلی مرتبہ مسلم لیگ ن کے امیدواروں نے آزاد حیثیت سے انتخاب لڑا، پیپلزپارٹی اکثریت برقرار رکھ پائے گی یا اس بار ایوان بالا کی حکمرانی حکمراں جماعت کے حصے میں آئےگی ؟فیصلہ آج ووٹوں کی گنتی کے عمل کے بعد ہو جائے گا۔

سینیٹ انتخابات کے سلسلے میں پنجاب کی 12 نشستوں پر 20 امیدواروں میں ، سندھ کی 12 نشستوں پر33 ، خیبر پختونخوا میں 11 نشستوں پر 26 جبکہ بلوچستان کی11 نشستوں پر23 امیدواروں کے درمیان مقابلہ تھا، جبکہ فاٹا کی 4 نشستوں پر 24 اور اسلام آباد کی 2 نشستوں پر 5 امیدوار مد مقابل تھے۔

قومی اسمبلی اور چاروں صوبائی اسمبلیوں میں سینیٹ الیکشن کے لئے ووٹنگ وقت مقرر پر شروع ہوئی، وفاقی وزیر رانا تنویر نے قومی اسمبلی میں پہلا ووٹ کاسٹ کیا ۔اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق ودیگر نے بھی اپنا ووٹ کاسٹ کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں