شام میں جنگ بندی کے معاملے پر امریکہ اور روس کے ایک دوسرے پر الزامات

امریکہ اور دیگر مغربی ممالک نے شام میں باغیوں کے زیر قبضہ علاقے پر بمباری جاری رکھنے پر شام کی حکومت کی مذمت کی ہے۔

ہفتے کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ایک قرارداد منظور کی تھی، جس میں شام میں 30 روز کی جنگ بندی کا کہا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس شام کے صدر بشار الاسد کی حکومت کی جانب سے بدھ کے روز فضائی حملہ کیے جانے کے بعد ہوا۔ یہ حملہ اس وعدے کے باوجود ہوا جس میں مشرقی غُوطہ میں منگل سے روزانہ 5 گھنٹے حملے روکنے کا وعدہ کیا گیا تھا۔ حملوں میں روزانہ وقفہ دینے کی تجویز شام کے اتحادی ملک روس نے پیش کی تھی۔

اقوام متحدہ، امریکہ اور دیگر مغربی ممالک نے حملے جاری رکھنے پر شام اور روس پر تنقید کی۔ نقادوں کا کہنا ہے کہ فضائی حملوں کے باعث متاثرہ علاقوں میں انسانی بنیاد پر امداد پہنچانے میں رکاوٹ پڑ رہی ہے۔

امریکہ نے کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال جاری رکھنے کے لیے بھی شام پر تنقید کی۔

تاہم، اقوام متحدہ میں شام کے سفیر بشار جعفری نے جواباً کہا کہ دہشت گردوں کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیے جا سکنے کی اطلاعات ہیں، جو ترکی سے لائے گئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں