شریف برادران ایک اور این آر او کیلیے عدلیہ پر دباؤ ڈالنا چاہتے ہیں،عمران خان

پی ٹی آئی کے رہنما عمران خان نے کہا ہے کہ انصاف فراہم کرنا عوام کا کام نہیں، انصاف عدالتیں فراہم کرتی ہیں، میرے خلاف درج تمام مقدمات مضحکہ خیز ہیں،شاہد خاقان عباسی کٹھ پتلی وزیراعظم ہیں،شریف برادران ایک اور این آر او کے لیے عدلیہ پر دباؤ ڈالنا چاہتے ہیں۔

احتساب عدالت کے باہرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ علی ترین نے ضمنی انتخاب میں سخت مقابلہ کیا،ایک نوجوان امیدوار نے حکومتی امیدوار کے خلاف 91ہزار ووٹ لیے جبکہ دوسری جانب لوگوں کو قیمے والے نان کھلا کر جلسے کرائےجارہے ہیں،لودھراں کے الیکشن میں پیسے خرچ کیے گئے۔

انہوں نے کہا کہ میں سیاسی جہدوجہد کررہا تھا،مجھ پر دہشت گردی کے 6 مقدمات درج کیے گئے،مجھے خصوصی پروٹوکول کی ضرورت نہیں ہے،تمام شہریوں کا ایک ہی مقام ہونا چاہیے۔عمران خان نے کہا کہ میں عام شہریوں کی طرح رہا ہوں، نواز شریف مغل اعظم ہیں۔ ایک شخص اربوں روپے ملک سے باہر لے کر جائے اور کیوں نکالا کا ڈراما کرے۔

چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ عوام کا کام ہے ووٹ دینا اور عدالت کا کام ہے انصاف دینا،اس ملک میں قانون کی بالادستی قائم کریں گے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو کرپشن میں سزا ہونے کا تمام کرپٹ عناصر کو ڈر ہے،عدلیہ پر این آر او کے ذریعے دباؤ ڈالا جارہا ہے۔

میڈیا سے گفتگو کے دوران ایک ہیلی کاپٹر کے گزرنے پر عمران خان نے دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس ہیلی کاپٹر میں میاں صاحب تو نہیں گزر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں