شہباز اور حمزہ پر فرد جرم عائد نہ ہوئی

لاہور کی احتساب عدالت میں آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل اور رمضان شوگر ملز کیس کی سماعت ہوئی۔

سماعت کے دوران قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ نون کے صدر میاں شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز عدالت میں پیش ہوئے۔

عدالت نے شہباز شریف کے وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز پر فرد جرم عائد نہیں کی۔

سماعت کے دوران مسلم لیگ نون کے صدر شہباز شریف کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ طبیعت کی خرابی کی وجہ سے شہباز شریف زیادہ دیر بیٹھ نہیں سکتے۔

شہباز اور حمزہ پر فرد جرم عائد نہ ہوئی

جس پر عدالت نے شہبازشریف کو کمرۂ عدالت سے جانے کی اجازت دے دی۔

عدالت نے حاضری لگنے کے بعد شہباز شریف کے ساتھ حمزہ شہباز کو بھی جانے کی اجازت دے دی۔

اس موقع پر احتساب عدالت نے شہباز شریف کو ہدایت کی کہ آپ جاتے ہوئے اپنے وکلاء کے علاوہ جو دیگر لوگ ساتھ آئے ہیں انہیں بھی لے جائیں۔

عدالت نے عملے کو ہدایت کی کہ جو لوگ عدالت میں شور شرابا کر رہے ہیں انہیں کان سے پکڑ کر باہر نکال دیا جائے۔

عدالت سے جانے کی اجازت ملنے کے بعد شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز عدالت سے روانہ ہوگئے۔

شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی لاہور کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر عدالت کے اطراف میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ نون کے صدر شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کا حکم دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں