صحت مند ہاتھوں سے ہی صحت مند خوراک کی تیاری ممکن , پنجاب فوڈ اتھارٹی میڈیکل سکریننگ لیب کی جنوری 2019 کی کارکردگی رپورٹ جاری

لاہور (سنہرا دور) : پنجاب فوڈ اتھارٹی نے محفوظ خوراک کی فراہمی کے پیشِ نظر ماہانہ سکریننگ رپورٹ کے نتائج جاری کر دیے ہیں ۔رپورٹ کے مطابق جنوری 2019 میں خوراک کے کاروبار سے منسلک 5 ہزار 882 افراد کا معائنہ کیا گیا جس میں471 فوڈ ورکرز مختلف بیماریوں کا شکار پائے گئے۔خوراک سے وابستہ افراد کا صحت مند ہونا لازمی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی نے میڈیکل سکریننگ لیب جنوری 2019 کی کارکردگی رپورٹ جاری کر دی ہے۔ صوبہ بھر کے مجموعی طور پر 5 ہزار 882 فوڈ ورکرز کے ٹیسٹ کیے گئے جس میں471 فوڈ ورکرز مختلف بیماریوں کا شکار پائے گئے۔لاہور میں 2 ہزار 829 ، ملتان 1250 ،گوجرانوالہ 705 اورراولپنڈی میں 1098 افراد کی میڈیکل سکریننگ کی گئی۔سکریننگ لیبز میں چیکنگ کے دوران5 ہزار 411 افراد کے میڈیکلز کلیئر پائے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق 154 افراد ٹائیفائیڈ ،26 افراد ٹی بی، 130 ہیپاٹائٹس بی جبکہ 161 افراد ہیپاٹائٹس سی کا شکار پائے گئے۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ صحت مند ہاتھوں سے ہی صحت مند خوراک کی تیاری ممکن ہے۔خوراک سے وابستہ افراد کا صحت مند ہونا لازمی ہے۔بیمار فوڈ ورکرز سے جراثیم خوراک میں منتقل ہو کربیماریوں کے پھیلاؤکا باعث بن سکتے ہیں۔کیپٹن(ر)محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ متاثرہ افرادبراہ راست خوراک تیار کرنے کے علاوہ دوسرے شعبوں میں کام کر سکتے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ پنجاب میں خوراک سے وابستہ ہر شعبے کی ہر سطح پر کڑی نگرانی کی جا رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں