ضمنی ریفرنس کیس، واجد ضیاء احتساب عدالت میں پیش

احتساب عدالت میں ایون فیلڈ پراپرٹیز ضمنی ریفرنس کی سماعت آج ہو رہی ہے، جس میں پاناما کیس کی جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء بیان ریکارڈ کیا جائے گا،جبکہ نواز شریف اور مریم نواز کو ناسازی طبیعت کے باعث حاضری لگا کر جانے کی اجازت دے دی گئی۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر ایون فیلڈ پراپرٹیز ضمنی ریفرنس پر سماعت کر رہے ہیں۔سماعت کے موقع پر سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر عدالت میں پیش ہوئے۔

استغاثہ کے گواہ واجد ضیا تاخیر سے احتساب عدالت پہنچے۔ ان کے آنے سے قبل نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ واجد ضیا سپریم کورٹ سے ریکارڈ لے کر آئیں گے، جس کے بعد سماعت میں کچھ دیر کا وقفہ دیا گیا ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر عدالت میں پیش ہوئے تاہم طبیعت کی ناسازی کی بناء پر عدالت نے نواز شریف اور مریم نواز کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور کرکے انہیں حاضری لگا کر جانے کی اجازت دے دی جبکہ جج محمد بشیر نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو عدالت میں ہی رکنے کا حکم دیا ہے۔

ایون فیلڈ پراپرٹیز ضمنی ریفرنس کی سماعت میں بیان قلمبند کرانے کے لیے پاناما کیس کی جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاءعدالت میں ابھی تک نہیں پہنچ سکے ہیں۔

کیس میں مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے وکیل واجد ضیاء پر آج اور نواز شریف کے وکیل 13 مارچ کو جرح کریں گے۔

اس سے قبل میڈیا سے گفتگو میں واجد ضیاء کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کا والیم 10 اب غیر متعلقہ ہے، نواز شریف اور شریف خاندان کے خلاف اس کے علاوہ بھی کافی ثبوت موجود ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ تحقیقات کے لیے کسی کا دباؤ قبول نہیں کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں