عوام فیصلہ کریں میٹرو چاہیے یا روزگار؟بلاول بھٹو

پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عوام فیصلہ کریں میٹرو چاہیے یا روزگاراور مسائل کا حل چاہیے،ہمارے منشور میں بھوک مٹائو پروگرام ہے۔

اوچ شریف میں جلسہ عام سے خطاب میں بلاول بھٹو نے کہا کہ مجھے اقتدار کا لالچ نہیں ہے،میں مزدوروں کو ان کی جائز اجرت دلاناچاہتا ہوں،ہم غریب عوام کا خیال کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ عوام فیصلہ کریں انہیں میٹرو چاہیے یا تعلیم،ہمیں شوبازی اور یوٹرن نہیں چاہیے ،ہم فوڈ کارڈز دیں گے ،کھانے پیسے کی اشیا کم داموں میں فراہم کریں گے۔

پی پی چیئرمین نے کہا کہ کھارے پانی کو میٹھا کرنے کیلئے آر او پلانٹس لگائے،کسان کارڈز سے فصلوں کو انشورنس ملے گی ، اسے سستے داموں کھاد ملے گی کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کسان خوشحال تو ملک خوشحال ۔

ان کا کہناتھاکہ میں ایسا معاشرہ چاہتا ہوں،جہاں ہر کسی کو برابری کا موقع ملے،ایسا پاکستان چاہتا ہوں جہاں قانون کی حکمرانی ہو،میرا مقابلہ کسی شخص سے نہیں،کسی سیاسی جماعت سے نہیں، میرا مقابلہ بیروزگاری،بھوک اور معاشی ناانصافی سے ہے۔

ترجمان بلاول بھٹو مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ اوچ شریف میں پولیس نے بلاول بھٹو کے قافلے کو راستے میں روک لیا ۔

شیری رحمٰن نے کہا کہ پنجاب پولیس بدمعاشی بند کرے انتخابی مہم چلانا ہر امیدوار کا حق ہے،بلاول کی پنجاب میں مہم چلانے سے خائف قوتیں اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہیں۔

سابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کہا کہ بلاول بھٹو کو اوچ شریف جاتے ہوئے راستے میں روکا گیا ،ضیا اور مشرف بھی نہیں چاہتے تھے کہ پیپلز پارٹی آگے آئے۔

پرانہ سکھر میں انتخابی جلسے سے خطاب میں خورشید شاہ نے کہا کہ سیکورٹی کےبہانے بلاول بھٹو زرداری کو روکا گیا،جلسہ گاہ میں بھٹو کے وارث کو دیکھنے کےلئے لاکھوں لوگ موجود تھے،ہم پولیس کے اقدام کی مذمت کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں