فاٹا میں مدفون معدنیات سے فائدہ اٹھایا جائے، شاہد رشید بٹ

اسلام آباد (سنہرادور) چیمبر آف سمال ٹریڈرز کے سرپرست شاہد رشید بٹ نے کہا ہے کہ فوج نے فاٹا میں بڑی حد تک امن و امان بحال کر دیا ہے جسکے بعد وہاں سماجی ترقی کیلئے مرکزی حکومت اقدامات کرے اور مدفون ذخائر سے فائدہ اٹھایا جائے تاکہ عوام کی حالت بہتر بنائی جا سکے۔ فاٹا اور خاص طور پرشمالی اور جنوبی وزیرستان کو مکمل طور پرقومی دھارے میں شامل کرنے سے دہشت گردی کا ناسور ختم ہو جائے گا اور امن کی بحالی سے ملکی ساکھ بہتر ہو جائے گی۔شاہد رشید بٹ نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ امن و امان کی صورتحال کے پیش نظر فاٹا سے بہت سے تاجر صوبہ خیبر پختونخواہ اور ملک کے دیگر حصوں کی طرف منتقل ہو گئے ہیں جس سے ان علاقوں کی معیشت کو مزید نقصان پہنچا ہے۔ ان تاجروں اور صنعتکاروں کی واپسی مکمل امن سے منسلک ہے۔انھوں نے کہا کہ وزیرستان قیمتی پتھروں، اربوں ڈالر کے تانبے، گرینائیٹ اور لوہے کے ذخائر سے مالا مال ہے جبکہ سونا،چاندی اور36000 ملین ٹن گرومیٹ اسکے علاوہ ہے جو فاٹا کے علاوہ ملک بھر کی تقدیر بدلنے کیلئے کافی ہے۔ شمالی وزیرستان میں صرف ایک مقام پر پاکستان کی چالیس سال کی ضروریات کے برابر آئل اورگیس موجود ہے جس سے جلد از جلد فائدہ اٹھایا جانا چائیے ۔انھوں نے کہا کہ تانبہ، سونا، چاندی اور آئل اینڈ گیس کے شعبہ میں مقامی کمپنیوں کے علاوہ غیر ملکی کمپنیوں کی حوصلہ افزائی کی جائے تاکہ اس علاوہ کے پسماندہ عوام کو معیار زیدگی بہتر بنایا جا سکے جو دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف سب سے موثر ہتھیار ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں