ماموں بھانجے کے ہاتھوں 7 سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل

فیصل آباد:  دودھ فروش شخص نے اپنے بھانجے کے ساتھ مل کر 7 سالہ معصوم بچی کو زیادتی کے بعد قتل کردیا۔ ذرائع کے مطابق فیصل آباد کے علاقے ڈی ٹائپ میں دودھ فروش سلیم اور اس کے بھانجے کے ہاتھوں 7 سالہ بچی کے زیادتی کے بعد قتل کا واقعہ پیش آیا ہے جس کے بعد علاقہ مکینوں میں سخت غصہ پایا جاتا ہے۔
پولیس کے مطابق معصوم بچی کی لاش قریبی فیکٹری سے ملی ہے جبکہ زیادتی اورقتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ دودھ فروش نے بچی کو 10 روپے واپس دینے کے بہانے دوبارہ بلا کر زیادتی کا نشانہ بنایا۔ دونوں ملزمان آپس میں ماموں اور بھانجے ہیں جنہیں گرفتارکرلیا گیا ہے۔ مقتول بچی کے والد کے مطابق دکاندارنے دودھ کی بقایا رقم میں 10 روپے واپس نہیں دیے تھے، بچی دکاندارسے بقیہ پیسے لینے گئی تھی جس کے بعد وہ واپس نہیں آئی۔ بعد ازاں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے آرپی او فیصل آباد سے رپورٹ طلب کرلی۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ ملزمان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے اورمتاثرہ خاندان کو انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں