مقبوضہ کشمیر میں مظالم کیخلاف عوام کا مارچ، بھارتی فوج کی وحشیانہ فائرنگ،میرواعظ، یاسین ملک گرفتار

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں کی شہادتوں پر آرمی ہیڈ کوارٹر زکی جانب احتجاجی مارچ کیا گیا جس پر بھارتی فوج نے وحشیانہ فائرنگ کی اور مارچ کی قیادت کرنے والے حریت رہنماؤں میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک کو حراست میں لے لیا گیا۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں نوجوانوں کی شہادت پر وادی بھر میں تیسرے روز بھی مکمل ہڑتال رہی۔مقبوضہ وادی میں سوگ کا سماں ہے۔حریت رہنماؤں کی اپیل پر سری نگر کے انڈین آرمی ہیڈ کوارٹر کی جانب احتجاجی مارچ کیا گیا، بوکھلاہٹ کی شکار بھارتی فوج نے حریت رہنماؤں میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔حریت رہنماؤں کی گرفتاری کے باوجود کشمیری نوجوانوں نے احتجاجی مارچ کو جاری رکھا اور بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ کی تمام تر رکاوٹوں کے باوجود بڑی تعداد میں بادامی باغ پہنچ گئے اور بھارتی جارحیت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں