نئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم نے فیس بک کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی

اس وقت سوشل میڈیا میں فیسبک، ٹوئیٹر اور انسٹاگرام کا طوطی بول رہا ہے۔ باقی تمام پلیٹ فارمز مقبولیت کے حوالے سے ان تینوں سے کہیں پیچھے ہیں۔ لیکن ایک نسبتاً نئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم “ویرو” نے اپنے اجراء کے چند ماہ میں ہی مقبولیت کے جھنڈے گاڑ دیے ہیں اور باقی سائٹس خصوصاً انسٹاگرام اور فیسبک کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔

برطانوی اخبار انڈیپنڈنٹ میں جاری ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق نئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ویرو کے اجراء کے بعد صارفین میں بے حد دلچسپی دیکھی گئی۔ اور لوگوں نے اتنی بڑی تعداد میں اکاؤنٹ بنانا شروع کر دیے کہ کمپنی کے برطانیہ میں موجود تمام سرورز ڈاؤن ہو گئے۔ اور انتظامیہ کو باضابطہ طور پر معذرت کرنا پڑی۔ خبر کے مطابق تاحال بےپناہ رش کی وجہ سے کمپنی سرورز مسائل کا شکار ہیں اور انہیں ٹھیک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ ویرو کو پہلی بار گزشتہ سال اپریل میں ایپل اسٹور پر لانچ کیا گیا تھا۔ اور ویب سائٹ پر جاری کمپنی منشور میں یہ اعلان کیا گیا تھا کہ ویرو کے پہلے دس لاکھ صارفین تازندگی مفت سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔ تاہم بعد میں اکاؤنٹ بنانے والے صارفین سے فیس وصول کی جائے گی۔

سوشل میڈیا پر گہری نظر رکھنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ ویرو کی بے پناہ مقبولیت کی دو بڑی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ ایک تو دیگر پلیٹ فارمز سے اکتائے ہوئے صارفین کا اس جانب راغب ہونا اور دوسرا ویرو کا آسان اور منفرد ڈیزائن کا ہونا ہے۔

ویرو انتظامیہ کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنے استعمال کنندگان کے لیے کسی خاص الگورتھم کا استعمال نہیں کیا جیسا کہ فیسبک میں کیا جاتا ہے۔ نا ہی ان کی ذاتی معلومات کو محفوظ کرنے کے لیے کوئی طریقہ کار وضع کیا ہے۔ اسی بناء پر ویرو صارفین بلاجھجک ایپ کا استعمال کرتے ہوئے اپنے عزیزواقارب اور دوستوں سے رابطے میں رہ سکتے ہیں۔

ویرو پر ابتدائی اکاؤنٹس بنانے والوں میں شوبز سے تعلق رکھنے والی نامور ہستیاں اور آرٹسٹ بھی شامل ہیں۔ جس کی بناء پر ویرو کو مستقبل کا انسٹاگرام بھی قرار دیا جا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں