نیازی صاحب کی زبان کا مقابلہ پی پی نہیں کرسکتی ، بلاول بھٹو

پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ نیازی صاحب کی زبان کا مقابلہ فیض آباد دھرنے والے کرسکتے ہیں پی پی پی نہیں ۔

ملتان میں جلسہ عام سے خطاب میں بلاول بھٹو نے کہا کہ میاں نوازشریف نئے نئے نظریاتی ہوئےہیں ، میں ان سے پوچھتا کیا یہ وہی نظریہ تو نہیں جس کی قسم آپ نے ضیا الحق کی قبر پر کھائی تھی ۔

پی پی چیئرمین نےمزید کہا کہ میاں صاحب نے پارلیمنٹ کو اتفاق فائونڈری بنادیا ،جس ایوان سے انہیں طاقت ملی اسے ہی بے توقیر کیا ،اگر آج جمہوریت اور ادارے کمزور ہیں تو اس کی وجہ بھی آپ ہیں ،

انہوں نے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ یوتھ کی بات کرتے ہیں،پوچھتا ہوں آپ کی عمر کیا ہے ؟خان صاحب اصولوں کی سیاست کے ساتھ سیاست کے اصول بھی سیکھیں۔

پی پی چیئرمین نے یہ بھی کہا کہ ہم ایشوز پر بات کرتے ہیں ، ذاتیات پر کیچڑ اچھالنا ہماری روایت نہیں ،نیازی سروسز نے جو اصلاحات متعارف کرائی اس کامقابلہ فیض آباد والے کر سکتےہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ خان صاحب آپ کا وزیر اعلیٰ سب سے عمر رسیدہ اور سندھ کا سب سے کم عمر ہے،آپ سن لو ،یہ میرا پہلا اور آپ کا آخری الیکشن ہوگا ۔

انہوں نے کہا کہ چھوٹے میاں صاحب کو ماڈل ٹائون کے قتل عام سمیت ،ہر ظلم اور کرپشن کا حساب دینا ہوگا،پنجاب کی بربادی کی وجہ شہبازشریف ہیں، پی پی جنوبی پنجاب کو صوبہ بناکر رہے گی ۔

بلاول بھٹو کا مزید کہناتھاکہ کس نے آگے بڑھتے ہوئے پاکستان کا راستہ روکا ؟کس نے محنت کشوں کی روٹی پر ڈاکا ڈالا،وہ کون تھے جو آخری دم تک کانٹے چنتے رہے اور جمہوری راہداریوں کو صاف کرتے رہے۔

پی پی چیئرمین نے یہ بھی کہا کہ یہ دھرتی کے بیٹے تھے اور بینظیر کے جانثار تھے ،ان جیالوں اور وفاداروں کی تیسری نسل جواں ہوچکی ہے ،اسی نسل کا نمائندہ بن کر جنگ لڑنے کا اعلان کرتا ہوں ۔

ان کا کہناتھاکہ ن لیگ کے ساڑھے 4 سال میں سب سے زیادہ حملے زرعی معیشت پر ہوئے ،ورلڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق پنجاب سب سے غیر مساوی صوبہ ہے ،راجن پور، بہاولپور جنوبی پنجاب کے پسماندہ ترین علاقے ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پورے ملک کو غذا فراہم کرنیوالے خود غذائی قلت کا شکار ہیں ،پانی کا بحران بڑھ رہاہے، زمین کی پیداوار کم ہورہی ہے،حکومتی پالیسی کی وجہ سے کسانوں کو نقصان ہورہاہے، عزم کرتے ہیں کسانوں کو ان کی پیداوار کا معاوضہ یقینی بنائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں