ویتنام میں بحری بیڑہ بھیج کر امریکہ وقت اور پیسہ برباد کررہا ہے،چین

ویتنام کی بندرگاہ پر امریکی جنگی بحری بیٹرے کی آمد سے چین پر کوئی دباؤ نہیں پڑے گا ، امریکہ خواہ مخواہ اپنا وقت اور پیسہ برباد کررہا ہے ،امریکی جنگی بحری بیڑے یو ایس ایس کارل ونسن کی خطے میں آمد ناپسندیدہ ہے اور اس سے بحیرہ جنوبی چین میں طاقت کا توازن بگڑ جائےگا ۔

چین کی طرف سے خطے کی نگرانی فطری ہے تاہم ہم یہ نہیں سمجھتے کہ امریکی بحری بیڑہ جنوبی چینی سمندر میں چین کےلئے کوئی مشکلات پیدا کر سکتا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار چین کے معروف اخبار گلوبل ٹائمز نے اپنی تازہ ترین اشاعت میں کیا ہے ۔

اخبار کے مطابق امریکی بحری بیڑہ چین کے لئے کوئی خصوصی دباؤ پیدا نہیں کرسکتا ۔ بحری بیڑہ بھیج کر صرف اپنا وقت اور پیسہ برباد کررہا ہے ۔ یاد رہے کہ امریکہ کا جنگی بحری بیڑہ ویتنام کی بندرگاہ پر پہنچ گیا ہے ۔

ویتنام کی جنگ کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ کوئی امریکی جنگی بیڑہ ویتنام کی بندرگاہ پر پہنچا ہے ۔ چین اس علاقے کے جزائر پر اپنی ملکیت کا دعویٰ کرتا ہے ۔ امریکی بحری بیڑے میں ایک کروز اور تباہ کن جہاز شامل ہیں ۔

یہ بحری بیڑہ اس وقت اس علاقے میں پہنچا ہے جب چین نے ان جزائر میں ایک ہوائی اڈہ ،ریڈار سٹیشن اور بنیادی ڈھانچے کی باقی تعمیرات مکمل کی ہیں ۔ چین امریکی بحری بیڑے کی آمد پر پہلے بھی اپنا ردعمل ظاہر کرچکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں