پاناما جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء کو لیگی رہنماؤں کی دھمکیاں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت نے عدلیہ اور نیب کے بعد پاناما جے آئی ٹی کے خلاف بھی محاذ کھول دیا اور پانامہ کیس میں بنائی گئی جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیا کو لیگی رہنماؤں کی جانب سے دھمکیاں دی جارہی ہے۔

لیگی رہنماؤں نے عدلیہ اور نیب کے بعد پاناما جے آئی ٹی کو نشانے پر لے لیا، پانامہ کیس میں بنائی گئی جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیا پر نااہل وزیر اعظم کے داماد کیپٹین(ر) صفدر نے شدید تنقید کی۔

نوازشریف کےدامادریٹائرڈ کیپٹن صفدر نے واجد ضیا کی قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی میں طلبی کیلئے کمیٹی میں تحریک استحقاق جمع کرائی ہے، کیپٹن صفدر نے تحریک استحقاق میں کہا ہے کہ واجد ضیا نے ان پر بے بنیاد الزامات لگائے، ان کا استحقاق مجروح ہوا، بے بنیاد الزامات پر جے آئی ٹی سربراہ کو بلایا جائے۔

واجد ضیاء کو دو فروری کی صبح ساڑھے دس بجے بلا کر بازپرس کی جائے، جے آئی ٹی نے کیپٹن صفدر کو پندرہ سو ریال جیب خرچ ملنے کا انکشاف کیا تھا۔

واجد ضیاء کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی میں طلب کیا جائے گا ، قومی اسمبلی کی کمیٹی میں طلبی کا ایجنڈا تیار کرلیا گیا ، طلبی کیپٹن صفدر تحریک استحقاق پر ہوگی۔

دوسری جانب پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈارکا کہنا ہے کہ نون لیگی رہنماؤں کی واجد ضیاء کودھمکیاں سسیلین مافیا کی واضح نشانی ہے، ن لیگی جے آئی ٹی پر اثڑ انداز ہونےکی کوشش کرتے رہے، نیب کورٹ پر اثرا نداز ہونے کے لیے ڈرامہ رچایا جارہا ہے۔سینیٹر مرتضیٰ وہاب نے نجی چینل کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا جے آئی ٹی سربراہ کو دھمکیاں دینا اچھی بات نہیں۔

سابق اٹارنی جنرل شاہ خاور کا کہنا ہے کہ چیئرمین نیب دھمکیاں دینے والے کی گرفتاری کا حکم دیں، واجد ضیاءکودھمکیاں عدالت کے واضح حکم کی خلاف ورزی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں