پاکستان سمیت دنیا بھر میں یوم یکجہتی کشمیر آج منایا جارہا ہے

اسلام آباد: پوری دنیا میں بسنے والے پاکستانی آج یوم یکجہتی کشمیر اس عہد کی تجدید کیساتھ منا رہے ہیں کہ آزادی کی جدوجہد میں ہمیشہ مظلوم کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑے رہیں گے۔ پاکستان کی عسکری قیادت نے بھی بھارت کو خبردار کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کی جائیں اور کشمیروں کے حق خود ارادیت کا احترام کیا جائے۔

بھارتی مظالم کے حوالے سے سال 2018ء بد ترین رہا، 425 بے گناہ کشمیری شہید ہوئے جبکہ پیلٹ گن کے استعمال سے بھی ہزاروں شہری بینائی سے محروم ہو چکے ہیں جن میں معصوم بچوں اور خواتین کی بڑی تعداد شامل ہے۔

سرینگر، شوپیاں، کلگام، پلوامہ اور بارہ مولا سمیت ریاست بھر میں گھر گھر تلاشی اور محاصروں کے دوران انسانیت سوز مظالم کا سلسلہ جاری رہا۔ سال کا شاید ہی کوئی ایسا دن گزرا جب بھارتی فوج نے سرحد کے دونوں جانب رہنے والے کشمیریوں کے خون سے اپنی پیاس نہ بجھائی ہو۔

جنوری کے مہینے میں بھارتی فوج نے فائرنگ اور تشدد کر کے 25 افراد کو شہید کر دیا۔ فروری کے مہینے میں 16 جبکہ مارچ میں 35 نہتے کشمیریوں کو موت کی نیند سلا دیا گیا۔

اپریل اور مئی میں بھارتی فوج نے ظلم کی ہر حد پار کر دی۔ اپریل میں 43 جبکہ مئی میں 47 کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔ جون 2018ء میں 36، جولائی میں 21، اگست میں 35 جبکہ ستمبر میں 43 کشمیریوں کو شہید کر دیا گیا۔

بھارتی فوج نے کشمیریوں کو اپنی وحشیانہ طاقت کا نشانہ بناتے ہوئے اکتوبر میں 43، نومبر میں 52 جبکہ دسمبر میں مزید 29 بے گناہ کشمیریوں کو شہید کیا۔ بھارتی بربریت کے باجود پاکستان کی عسکری قیادت اپنے دیرینہ موقف پر قائم ہے۔

قتل وغارت کے باجود بھارت آج تک کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو دبا نہ سکا، ہر روز کشمیری اپنے پیاروں کو اس عہد کے ساتھ قبروں میں اتارتے ہیں کہ کشمیر کی آزادی تک تکمیل پاکستان کی یہ جنگ جاری رہے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں