پاکستان نے پروپیگنڈا کرنے پر بھارت کے خلاف شکایت کردی

پاکستان نے منفی پروپیگنڈا کرنے پر بھارت کے خلاف فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کو شکایت کردی ہے۔ پاکستانی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کے فیصلے سے ہمیں باضابطہ طور پر آگاہ نہیں کیا گیا ، ٹاسک فورس کی کارروائی پوشیدہ رکھی جاتی ہے جبکہ ممبران پر اس کارروائی کے حوالے سے تبصرہ کرنے کی ممانعت ہے۔ایف اےٹی ایف کا فیصلہ جون میں سنایا جائے گا۔

بھارتی میڈیا کی جانب سے پاکستان کے خلاف کیا جانے والا پروپیگنڈا جھوٹا نکلا ، دنیا بھر میں منی لانڈرنگ پر نظر رکھنے والے ادارے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے کہا ہے کہ اس نے پاکستان کا نام اپنے گرے لسٹ میں شامل نہیں کیا ہے ۔

ٹاسک فورس کی کمیونی کیشن منیجر کے مطابق پاکستان کو 3ماہ ملے ہیں تاکہ وہ دہشت گردی کے لیے منی لانڈرنگ روکنے کی خاطر ٹھوس اقدامات کرے اور اگر پاکستان یہ اقدامات نہیں کر پاتا تو پھر اس کے لیے مشکلات ہو سکتی ہیں ۔

ایف اے ٹی ایف کی منیجر کمیونی کیشن نے واضح کیا کہ اعلامیہ جاری ہونے سے قبل پاکستان کا نام گرے لسٹ میں شامل ہونے کی جو خبریں سامنے آئی ہیں اس کا ذمہ دار ادارہ نہیں ہے ۔

واضح رہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس دنیا بھر میں منی لانڈرنگ پر نظر رکھنے والا ادارہ ہے۔ گرے لسٹ کا مطلب یہ ہے کہ پاکستان دہشت گردی کی فنانسنگ کے حوالے سے واچ لسٹ پر ہوگا۔

تجزیہ کاروں کے مطابق اس فیصلے سے پاکستان کو دنیا بھر سے بینکنگ رابطوں میں مشکلات پیش آ سکتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں