پنجاب حکومت کے الزامات بے بنیاد ہیں، ترجمان نیب

حکومت پنجاب اور نیب میں بیان بازی شدت اختیار کرگئی۔ ترجمان نیب نے پنجاب حکومت کے الزامات بے بنیاد قرارقرار دیتے ہوئے کہا کہ احدچیمہ نے 2015 میں بسمہ اللہ انجینئرنگ کوٹھیکہ دیا، جو چوتھے درجے کی کمپنی تھی اور 15کروڑ تک کے کام کے لیے اہل تھی۔

ترجمان نیب کے مطابق سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کی وجہ سے حکومت کو 45کروڑ 50 لاکھ روپے کے لیکوڈیشن نقصانات کا سامنا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہاؤسنگ اسکیم کی 20 کنال اراضی احد چیمہ نے لاہور کینٹ میں حاصل کی جو ان کے بھائی، احمد سعید چیمہ، بہن سعدیہ منصور اور کزن کے نام پر ہیں۔

ترجمان کے مطابق بسمہ اللہ انجینئرنگ کے پاس 90فیصد شیئرتھے ، جبکہ اسپارکو اور چائنہ فرسٹ میٹالوجیکل گروپ کے پاس صرف 10فیصد شیئر تھے اور تینوں کمپنیوں کے جوائنٹ وینچر کو 24 مارچ 2015 کو کام کا ٹھیکہ دیا گیا۔

نیب ترجمان کا کہنا ہے کہ آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم میں 61 ہزار شہریوں نے درخواستیں جمع کرائیں، شہریوں نے الاٹمنٹ کے لیے تقریباً 6 کروڑ روپے پراسیسنگ فیس بھی جمع کرائی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں