’پولیس میں سیاسی مداخلت کا ذمہ دار فرد نہیں ادارہ ہوتا ہے‘

آئی جی موٹروے اینڈ ہائی ویز، اے ڈی خواجہ کا کہنا ہے کہ پولیس میں سیاسی مداخلت کا ذمہ دار فرد نہیں ادارہ ہوتا ہے، کسی بھی آئی جی کا دورانیہ کم از کم دوسال ہونا چاہیے۔

آئی جی موٹروے اینڈ ہائی ویز اے ڈی خواجہ نے کا کہنا ہے کہ پولیس کا بنیادی کام تفتیش ہے اور یہ نظام بہت کمزور ہے، جب تک پولیس کا تفتیشی نظام ٹھیک نہیں ہو گا،پولیس ٹھیک نہیں ہو گی۔

کراچی میں چینی قونصلیٹ پر دہشت گردوں کے حملے کے دوران ایک وفاقی وزیر کے بندوق کے ساتھ وہاں جانے کے متعلق سوال پر اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ کرائم سین پر پولیس کے علاوہ کسی کو جانے کی اجازت نہیں۔

آئی جی موٹروے کا کہنا تھا کہ پنجاب اور سندھ کا تھانہ کلچر ایک جیسا لیکن کے پی کے کا مختلف ہے۔ ڈیوٹی کے اوقات، رہائش، ماحول اور ذاتی مسائل بنیادی ایشوز ہیں، ان معاملات کے حل کے بعد پڑھے لکھے لوگوں کو آگے لانا ہو گا۔

آئی جی اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ موٹروے میں 1997ء سے اب تک ایک ہی طرز کی پولیسنگ جاری ہے۔ جدید ٹیکنالوجی کو شامل کریں گے،اس کے لیے ترجیحات طے کر لی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں