چیف جسٹس نے خواتین کے اسکرٹ سے متعلق بیان پر معذرت کرلی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے خواتین کے اسکرٹ سے متعلق اپنے بیان پر معذرت کرلی۔بدھ کوسپریم کورٹ میں ایک کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے خواتین سے متعلق بیان پر معذرت کرتےہوئے کہا کہ تقریب میں چرچل کی تقریر کو کوٹ کیا تھا،مجھے اپنے الفاظ پر افسوس ہے،عورتوں کی عزت کرتا ہوں،وہ بات کسی جنس کیلئے نہیں کی تھی،میرے لئے کوئی انا کا مسئلہ نہیں۔

چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں مزید کہا کہ لاہور میں کی گئی میری تقریر سے اگر کسی کی دل آزاری ہوئی ہے تو میں معذرت خواہ ہوں اور میرا مقصد کسی کی دل آزاری کرنا نہیں تھا، میں نے اسکرٹ کے بارے میں ونسٹن چرچل کے محاورے کی مثال دی تھی۔

چیف جسٹس نے کہا کہ خواتین ہمارے معاشرے کا 50فیصد حصہ ہیں، سوشل میڈیا پر میرے بیان کو ایشو بنانے کی کوشش کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ چیف جسٹس نے گزشتہ ہفتے ایک تقریر کے دوران کہا تھا کہ تقریر کی طوالت عورت کے اسکرٹ کی طرح ہونی چاہیے جو نہ اتنی لمبی ہو کہ لوگ اس میں دلچسپی کهو دیں اور نہ ہی اتنی مختصر کہ موضوع کا احاطہ نہ کر سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں