ڈکٹیٹروں کو تحفظ دینے والے کہہ رہے ہیں کہ میں صادق اور امین نہیں، نواز شریف کا کوئٹہ میں خطاب

سابق وزیراعظم نواز شریف نے کوئٹہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ قانون کی اصل حکمرانی سے ہی ملکی ترقی ہوگی، احتساب کے نام پر انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا 4 سال میں مجھ پر کرپشن کا کوئی اسکینڈل سامنے نہیں آیا، بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نا اہل کر دیا گیا، حکومت سنبھالی تو 20، 20 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہوتی تھی۔ ان کا کہنا تھا اپنا اصول اور نظریہ کبھی چھوڑا ہے اور نہ کبھی چھوڑوں گا۔ نواز شریف نے پشتونخواء ملی عوامی پارٹی کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام نے مجھے نکالنے کا فیصلہ مسترد کر دیا، جے آئی ٹی بنائی گئی اور ایک ہی بنچ نے بار بار فیصلے کئے۔ نواز شریف نے کہا پی سی اور کے تحت حلف لینے والے اور ڈکٹیٹروں کو تحفظ دینے والے کہہ رہے ہیں کہ نواز شریف صادق اور امین نہیں۔ انہوں نے کہا مائنس کا بہانہ نہ ملا تو تنخواہ نہ لینے پر نا اہل کر دیا، عوام پلس کر دیں تو کوئی مائنس نہیں کر سکتا، کرپشن کرتا تو فیصلہ تسلیم کر کے گھر چلا جاتا۔ ان کا کہنا تھا ملک کو اندھیروں میں دھکیلنے والوں کو آج تک کسی نے کیوں نہیں پوچھا؟۔

اپنا تبصرہ بھیجیں