’کاروان بھٹو‘ اپنی منزل پر پہنچ گیا

پاکستان پیپلز پارٹی کا حکومت کے خلاف ٹرین مارچ (کاروان بھٹو) اپنی آخری منزل لاڑکانہ پہنچ گیا۔

لاڑکانہ ریلوے اسٹیشن پر پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے جیالوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 4 اپریل کو قائد عوام ذوالفقار علی بھٹو کو خراج عقیدت پیش کریں گے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ قائد عوام نے شہادت قبول کی، آمر کے سامنے نہیں جھکا، انہوں نے کبھی اپنے نظریے سے یوٹرن نہیں لیا۔

پی پی پی کے چیئرمین کا مزید کہنا تھا کہ خان صاحب فکر نہ کریں ہم آپ کی حکومت نہیں گرائیں گے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ میری پارٹی کے وفاداروں کو نااہل کرکے الیکشن سے آؤٹ کیا گیا، لیاری میں بھی دھاندلی ہوئی کیوں کہ وہ نہیں چاہتے تھے بھٹو کا نواسہ اسمبلی میں آئے مگر نانا کے عوام نے ان کی سازشیں ناکام بنائیں۔

بلاول نے کہا کہ شہید بےنظیر بھٹو کا راستہ روکنے کے لیے نیب کو استعمال کیا گیا، احتساب کے نام پر سیاسی انتقام اور پولیٹیکل انجینئرنگ قبول نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ اسمبلی کے اسپیکر آغا سراج خان دورانی کی اسلام آباد سے گرفتاری سے کیا پیغام دینا چاہتے ہو؟ کیا یہ سمجھتے ہیں کہ بھٹو کا نواسہ جھک جائے گا؟ ڈرنے والے، بھاگنے والے نہیں۔

لاڑکانہ ریلوے اسٹیشن پر پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے استقبال کے لیے جیالوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔

کراچی کینٹ اسٹیشن سے لاڑکانہ کے سفر کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے 24 مقامات پر کارکنوں سےخطاب کیا۔

واضح رہے کہ پی پی پی نے حکومت کے خلاف ٹرین مارچ منگل سے شروع ہوا تھا جو آج اپنی اختتامی منزل پر پہنچ گیا۔

پیپلز پارٹی نے کاروان بھٹو مارچ ٹرین کی بکنگ 10 لاکھ 51 ہزار 4 سو روپے میں کرائی تھی جو ایک لگژری اسپیشل سیلون، ایک اے سی سلیپر سمیت 14 ڈبوں پر مشتمل تھا۔

ٹرین میں 8 اکانومی کلاس بوگیاں اور 2 پاور پیک انجن بھی شامل تھے جب کہ سیکورٹی کے لیے گارڈز کی دو بوگیاں بھی اس ٹرین کا حصہ تھیں، ٹرین میں اجلاس کے لیے میٹنگ روم، کچن اور دیگر تمام سہولتیں بھی موجود تھیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں