کراچی میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے زندگی اذیت ناک بنا دی

کراچی میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ نے لوگوں کی زندگی اذیت ناک بنا دی، صبح، دوپہر، شام، رات جب چاہا بتی گل کی جانے لگی، فلیٹوں کے مکینوں کا برا حال، ابھی تو سورج سوا نیزے پر نہیں آیا۔

مئی جون نہیں آئے، پورابل بھر کےبھی سکھ کا سانس میسر نہیں، بجلی چوری نہ ہونے والے علاقوں کا بھی کوئی پرسان حال نہیں۔

نارتھ کراچی، گلشن اقبال،نارتھ ناظم آباد، ملیر، لانڈھی، کورنگی، کلفٹن کوئی علاقہ نہ چھوڑا، 2 سے 8 گھنٹے روزانہ لوڈ شیڈنگ شروہ ہوگئی ہے، کے الیکٹرک نے گیس کی کمی کو وجہ قرار دے دیا۔

کراچی شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ سے دن میں 3سے 4باربجلی کی فراہمی معطل رہنا معمول بن گیا، لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ علاقوں میں بھی بجلی کی بندش کی جارہی ہے۔

لوڈشیڈنگ سے متاثرہ علاقوں میں ملیر، لانڈھی، شاہ فیصل کالونی، لیاقت آباد،گلستان جوہر کےمختلف بلاک، نارتھ کراچی، ناگن چورنگی اور گلشن اقبال بھی شامل ہیں۔

کراچی میں لوڈشیڈنگ کی وجوہات کے حوالے سے کے الیکٹرک کی ترجمان سعدیہ دادا کا کہنا ہے کہ 100 ایم ایم سی ایف ڈی گیس شارٹ فال کے باعث پلانٹس متاثر ہیں۔

ترجمان کے الیکٹرک کا مزید کہنا ہے کہ کے الیکٹرک کو ملنے والی گیس سپلائی میں کوئی بہتری نہیں ہوئی، مجبوراً اضافی لوڈشیڈنگ کرنی پڑ رہی ہے جس کیلئے صارفین سے معذرت خواہ ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں