کٹل فِش کے بچے انڈے میں بھی خود کو دشمن سے بچاتے ہیں

پیرس: سائنسدانوں نے ایک قسم کی کٹل فِش کے بارے میں حیرت انگیز انکشاف کیا ہے کہ اس کے انڈوں کے اندر زندہ بچے دشمن کا نوالہ بننے کیلئے ذہانت بھرا حربہ استعمال کرتے ہیں۔

فرانس اور تائیوان کی جامعات کے ماہرین نے کہا کہ ایک قسم کی فیرو کٹل فِش کا بچہ انڈے کی شفاف جھلی میں رہتا ہے اور دشمن اسے آسانی سے دیکھ کر شکار کرسکتا ہے لیکن اس کیفیت میں بھی بچہ دیکھنے اور کیمیائی عمل پر اپنا ردِ عمل دکھاتا ہے۔

جیسے ہی کوئی حملہ آور مخلوق انڈے کھانے کیلئے آتی ہے بچہ سانس روک کر ساکت ہو جاتا ہے اور کافی دیر بے حس و حرکت رہتا ہے۔ اس طرح وہ دشمن کے جانے کا انتظار کرتا ہے۔ اس کی سب سے خطرناک شکاری پفر فِش ہے۔

کلاؤن فِش جیسی مچھلیاں کٹل فِش کے بچے نہیں کھاتیں اور اسی بنا پر جب کلاؤن فِش ان کے قریب آتی ہے یہ بے خوف ہو کر اپنا کام کرتے رہتے ہیں۔ اس سے ثابت ہوا کہ صرف اپنے اصل دشمن کے سامنے ہی بچے خود کو بچاتے ہیں۔ یہ پہلی مرتبہ کسی سمندری مخلوق کے انڈوں کے اندر بچوں میں اپنے تحفظ کا حیرت انگیز احساس ہے جسے وہ بہت کامیابی سے استعمال کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں