8 مہینے گزرنےکے بعد عوام مشکل میں پھنس گئے، محمد زبیر رہنما مسلم لیگ ن

مسلم لیگ ن کے رہنما و سابق گورنر سندھ محد زبیر نے کہا ہے کہ آٹھ مہینے گذرنےکے بعد ملک کے عوام مشکل میں پھنس گئے ہیں، ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ کیا گیاتھا لیکن چھ لاکھ نوکریاں چلی جائیں گی۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق گورنرسندھ محمد زبیر نے کہا کہ عمران خان کوبٹھایا گیا تھا کہ وہ معاشی مشکلات ختم کریں گے، مگر وہ ایسا کرنے میں ناکام نظر آرہے ہیں۔

محمد زبیر نے کہا کہ حکومت کے پاس معیشت کی بحالی کا حل مرغیاں، انڈے اور بکریاں ہیں،اس سال کے اختتام پر30سے 40 لاکھ پاکستانی غربت کی لکیر سے نیچے آ جائیں گے،معیشت ٹیکس وصولی سے بہتر ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان سے کہوں گا اپنی پرانی تقریریں سن لیں کچھ شرم آئےگی،پاکستان کی تاریخ میں اتنے قرضے نہیں بڑھے جتنے ان 8 ماہ میں بڑھے ہیں ہم لاتے تو بھیک ہوتی اور یہ لائیں ہیں تو پیکیج ہو گیا،ہم نے آئی ایم ایف کی شرائط نہیں مانیں۔

رہنما مسلم لیگ ن نے کہا کہ عمران خان کا دعویٰ تھا کہ ٹیکس وصولی دگنی کردیں گےجبکہ اب حالت یہ ہے کہ ٹیکس ہی جمع نہیں ہوپارہا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کہتے تھے کہ لیڈر ایماندار ہو تو لوگ ٹیکس دیتےہیں،خان صاحب کو سب سے زیادہ دھچکا ٹیکس وصولی نہ ہونے سے لگاہے۔

سابق گورنر سندھ نے کہا کہ عمران خان 10سال کا ذکر کرتے ہیں، مشرف کا ذکرکرتےہوئےان کی زبانیں لڑکھڑاتی ہے، کیونکہ موجودہ حکومت کےکئی وزیر پرویز مشرف کابینہ کےہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں