سپائیڈر مین بننے کی خواہش، تین بھائیوں نے خود کو خطرناک مکڑی سے کٹوا لیا

سپائیڈر مین فلم سےمتاثر ہونے کے بعد 3 بھائیوں نے خود کو ایک خطرناک مکڑی سے کٹوالیا ۔ اگرچہ وہ سپائیڈر مین تو نہیں بنے لیکن فوری طور پر ہسپتال ضرور جانا پڑگیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق واقعہ بولیویا کے دیہی علاقے میں پیش آیا جہاں انہوں نے ’بلیک وڈو‘ نامی مکڑی کو بار بار چھوا تاکہ وہ انہیں کاٹے اور تینوں کو مکڑی نے کاٹا یہاں تک کہ وہ اس سے متاثر ہونے لگے۔ تینوں بچے چرواہے ہیں لیکن خود سپائیڈر مین بننا چاہتے ہیں۔ مارول سےمحبت کرنے والے ان بچوں کے عمریں دس، بارہ اور آٹھ برس ہے ۔

بولیویا کی وزارتِ صحت کے مطابق وہ کیانتا کے علاقے میں اپنی بکریوں کے ساتھ تھے کہ انہیں بلیک وڈو سپائیڈر دکھائی دی اور انہوں نے سپائیڈر مین بننے کی ٹھانی۔ مکڑی کو اشتعال دلانے کے لیے انہوں نے اسے بار بار لکڑی سے چھیڑا بھی تھا۔

مکڑی کے ڈنک سے متاثر ہونے کے بعد ان کی تکلیف ناقابلِ برداشت ہوگئی اور تینوں رونے لگے۔ ان کی والدہ فوری طور پر انہیں قریبی ہسپتال لے گئی جہاں انہیں لاپاز کے بڑے ہسپتال میں لے جایا گیا۔ اس وقت بچوں کو بخار، بدن میں درد اور جھٹکے لگنے شروع ہوگئے تھے۔ ایک ہفتے بعد بچے صحتمند ہوگئے اور ہسپتال سے فارغ کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ بلیک وڈو اسپائیڈر زہریلی ہوتی ہے اوراس کا کاٹا ہوا بہت تکلیف پیدا کرتا ہے لیکن یہ جان لیوا نہیں ہوتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں