متاثرہ عمارت اب رہنے کے قابل نہیں، گرایا جائے گا، سعید غنی

سندھ کے صوبائی وزیر سعید غنی کا گلشن اقبال کی رہائشی عمارت میں ہوئے دھماکے سے متعلق کہناہے کہ متاثرہ عمارت اب رہنے کے قابل نہیں، اسے گرایا جائے گا۔

سعید غنی نے گلشن اقبال بلاک 7 میں دھماکے کی جگہ کا دورہ کیا اور میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکے میں 19 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ متاثرہ عمارت سے تمام لوگوں کو نکال لیا گیا ہے، یہ عمارت اب رہنے کے قابل نہیں رہی اسے گرایا جائے گا۔

سعید غنی نے بتایا کہ فلیٹس میں رہنے والے دیگر افراد کو دوسری جگہ منتقل کر دیا گیا ہے۔
دھماکے کی نوعیت سے متعلق پوچھے گئے سوال پر صوبائی وزیر نے کہا کہ اس وقت کچھ نہیں کہہ سکتا ۔

واضح رہے کہ کراچی کے علاقے گلشن اقبال بلاک 7 کی ایک رہائشی عمارت میں ہونے والے پراسرار دھماکے کے نتیجے میں 5 افراد جاں بحق جب کہ 20 سے زائد زخمی ہو چکے ہیں، دھماکا تخریب کاری کا نتیجہ ہے یا اتفاقی واقعہ ہے پولیس کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکی ہے۔

ڈی آئی جی کراچی ایسٹ نعمان صدیقی کے مطابق کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں مسکن چورنگی پر واقع ایک رہائشی عمارت میں آج صبح سوا 9 بجے خوفناک دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں رہائشی عمارت کے کارنر کے دو فلیٹ مکمل طور پر تباہ ہو گئے جبکہ عمارت کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

پولیس کے مطابق دھماکا فلیٹ میں ہوا تاہم نوعیت کا فوری طور پر علم نہیں ہو سکا جس کے لیے بم ڈسپوزل اسکواڈ کی ٹیمیں موقع پر معائنہ کر رہی ہیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی جانب سے مسکن چورنگی پر ہونے والے دھماکے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر کراچی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں