تعمیراتی شعبے سے وابستہ کاروباری برادری سہولیات کا بھرپور فائدہ اٹھائے، وزیر اعظم

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ تعمیراتی شعبے سے وابستہ کاروباری برادری سہولیات کا بھرپور فائدہ اٹھائے، جبکہ کاروباری برادری تعمیرات کے شعبے میں سرمایہ کاری کرے، ہر ممکنہ تعاون کریں گے۔

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی برائے ہاؤسنگ، کنسٹرکشن اینڈ ڈیولپمنٹ کا اجلاس ہوا، اجلاس میں ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز آف پاکستان کے 13 نمائندگان نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔

عمران خان نے کہا کہ حکومتی ترجیحات میں رکاوٹیں پیدا کرنے والے سرکاری اہلکاروں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ ہاؤسنگ یونٹس اور ہاؤسنگ کالونیز اور کمرشل عمارتوں میں بجلی اور گیس کی سہولیات بروقت یقینی بنائی جائے۔

عمران خان نے کہا کہ ملکی معیشت پر کورونا کے منفی اثرات زائل کرنے کے لیے تعمیراتی شعبے کا کلیدی کردار ہے، جبکہ نوجوانوں کو نوکریاں دینے کے لیے تعمیراتی شعبے کا فروغ کلیدی کردار کا حامل ہے۔

ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز آف پاکستان ( آباد) کے نمائندوں نے کہا کہ پہلی بار نجی بینکس تعمیراتی سرگرمیوں کے لیے بلڈرز اینڈ ڈیولپرز کی حوصلہ افزائی کی جارہی ہے، جبکہ 1370 ارب روپے کی معاشی سرگرمی پیدا ہوگی۔

اعلامیہ کے مطابق آباد کے 13 نمائندگان نے تین سے چار ماہ میں مختلف منصوبے شروع کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

تعمیرات کے شعبے میں این او سیز و دیگر منظوریوں کے لئے پنجاب اور خیبر پختونخوا کا جدید پورٹل قائم کردیا گیا، چیف سیکرٹری پنجاب کی جانب سے وزیرِ اعظم کو پورٹل کا عملی مظاہرہ پیش کیا گیا۔

وزیر اعظم کو دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ بلڈرز اور ڈیولپرز کی سہولت کے لیے پنجاب کے نو ڈویژن میں ای خدمت مراکز قائم کیے گئے ہیں، جبکہ14 اگست تک ای خدمت مراکز کا دائرہ کار تمام ضلعوں تک بڑھا دیا جائے گا۔

بریفنگ میں بتایاگیا کہ پورٹل کی بدولت ڈیولپرز اور بلڈرز درخواست اور متعلقہ دستاویزات آن لائن جمع کرا سکیں گے۔

وزیرِ اعظم نے دیگر صوبوں، گلگت بلتستان اور آزاد جموں و کشمیر کو پورٹل اور ون ونڈو سہولت کی فراہمی کی ہدایت کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں