اپوزیشن نے بجٹ اجلاس کا بائیکاٹ کیا

قومی اسمبلی میں بجٹ2018-19کی تقریر کئے جانے سے قبل اپوزیشن نے بجٹ اجلاس کا بائیکاٹ کردیا ۔

اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی تقریر کے بعد کھڑے ہوکر بائیکاٹ کا اعلان کیا ۔

انہوں نےوزیراعظم کی طرف سے حالیہ بجٹ کو سب سے اچھا بجٹ قرار دینے پر کہا کہ وہ نوازشریف کا خیال کریں ،یہ ان کی حکومت کے باقی 5 بجٹ اچھے نہیں تھے ؟

خورشید نے یہ بھی کہا کہ اس حکومت کو سال بھر کا بجٹ پیش کرکے اگلی حکومت کے بجٹ بنانے اور اس پیش کرنے کا حق نہیں چھینا چاہیے تھا۔

اپوزیشن نے مزید کہا کہ آئین کے آرٹیکل 91 کی غلط تشریح کر کے اس شخص کو وزارت کا حلف دلایا گیا جس کا پارلیمنٹ سے کوئی تعلق نہیں ۔

ان کا کہناتھاکہ بجٹ پیش کرنے والا شخص بہت قابل ہوگا مگر وہ غیر منتخب ہے ،براہ راست منتخب ہونے والے وزیر مملکت رانا افضل کی مفتاح اسماعیل کو وزیر بناکر ووٹ کے تقدس کو پامال کیا گیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں