جسم سےالگ دماغ کو36گھنٹے زندہ رکھنے کاکامیاب تجربہ

امریکی سائنسدانوں نے جسم کے بغیر 36 گھنٹے تک دماغ کو ‘ زندہ رکھنے کا کامیاب تجربہ کیا ہے،یہ تجربہ یالے ہونی ورسٹی کے نیورو سائنٹسٹ نینا سیستان کی سربراہی میں کام کرنے والی ٹیم نے سر نجام دیا ۔

دماغ کو 36گھنٹے تک زندہ رکھنے کاتجربہ کرنے والےامریکی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے ایک جانور کے دماغ کو جسم سے الگ کیا اوراس میںآکسیجن سے بھر پورگاڑھا سیال مادےکوگردش میں رکھا،اس عمل کے نتیجہ میںجانور کے دماغ میں زندگی جسم سے الگ ہونے کے با وجود 36 گھنٹوں تک برقرار رہی۔

سائنسدانوں کی ٹیم کے سربراہ اور یالے یونیورسٹی کے ڈائریکٹر،پروفیسرنینا سیستان کا کہنا ہے کہ اس کامیاب تجربے کی بدولت محققین کودماغ کے بارے میں جا ری تحقیقات کیلئے مفید اور حوصلہ افزا معلومات کے حصول میں معاون اور مددگار ہوں گی کہ یہ کس طرح کام کرتا ہے،کینسر سمیت دیگر دماغی بیماریوں پر تجرباتی طور پر کئے جانے والے علاج میں بھی معاون ہوگا۔

ان کا کہنا ہے کہ اس تجربے کی کامیابی کا مطلب یہ نہیں کہ انسان جلد ہی موت کو دھوکہ دے سکتا ہےتاہم اس تجربے سے مزید تحقیقات میںآسانیاں پید اہوں گی اور ان تجربات سے علاج کے زمرے میں استعفادہ کیا جا سکے گا۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں