مانسہرہ میں جلسہ عام: پاکستان چند جاگیرداروں کا نہیں ، نا اہل وزیراعظم نوازشریف

سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ اقامہ اور تنخواہ نہ لینے پر نااہل کرکے مجھ سے ذیادتی کی گئی ،اسے بدلنے کا راستہ آپ کا ووٹ ہے تاکہ ہم اسمبلی میں جاکر یہ قانون بدل دیں۔

مانسہرہ میں جلسہ عام سے خطاب میں نوازشریف نے کہا کہ ووٹ کو عزت دو کا مطلب پاکستانی نوجوانوں کو عزت دو ہے،پاکستان چند جاگیرداروں کا نہیں بلکہ 22کروڑ پاکستانیوں کا ہے۔

ان کا کہناتھاکہ2013ء میں عمران خان اور آصف زرداری ہمیں شکست نہیں دے سکے ،ہمیں چور دروازے سے نکلوایا گیا ،نااہل کروایا گیا ،مجھے معلوم ہے آپ کو یہ فیصلہ قبول نہیں۔

نوازشریف نے یہ بھی کہا کہ 2018ء کے الیکشن میں ہمارا مقابلہ عمران خان اور آصف زرداری سے نہیں ،پہلے کے مقابلے میں زیادہ ووٹ لیں گے اور کامیاب ہوں گے ۔

سابق وزیراعظم نے مزید کہا کہ سی پیک ہم لے کر آئے ، 2013ء میں چینی صدر پاکستان آکر منصوبے کا اعلان کرنا چاہتے تھے لیکن اسلام آباد کے دھرنے نے منصوبے ایک سال آگے بڑھادیا ورنہ آج اس علاقے میں سڑکیں اور ریلوے کا نظام بھی ہوتا ، سی پیک سے پاکستان کی تجارت کا مرکز ہزارہ اور مانسہرہ بننے والا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لاہور سے برہان تک میں نے نیا پاکستان دیکھا اور شاہ مقصود سے حویلیاں ، ایبٹ آباد و مانسہرہ تک پرانا پاکستان دیکھا ہے،میں دائیں بائیں دیکھ کر اس نئے پاکستان کو ڈھونڈتا رہا جس کے دعویٰ کیا گیا ، اگر خیبرپختونخوا شہبازشریف کے پاس ہوتا تو نقشہ بدل چکا ہوتا ۔

نوازشریف نے مزید کہا کہ پنجاب میں جاکر دیکھو آپ کو نیا پاکستان نظر آئےگا،جیسے ہی سندھ میں داخل ہوتو آپ کو پرانے پاکستانی تصویر نظر آنے لگتی ہے ۔

سابق وزیراعظم نے وفاقی وزیر برائے مذہبی امور سردار یوسف کو مبارک باد اور کہا کہ سابقہ دور میں آپ کی وزارت میں کرپشن ہوئی لیکن آپ کی پرفارمنس اچھی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں