ثمینہ پیرزادہ نے پاکستان کے طرزِ حکومت کو ’سرکس‘ کا نام دیدیا

پاکستان کی سینئر اداکارہ و میزبان ثمینہ پیرزادہ پاکستان کے طرزِ حکومت سے تنگ آگئیں اور اس طرزِ حکومت کو ’سرکس‘ کا نام دے دیا۔

ثمینہ پیرزادہ نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر پاکستان میں موجود کئی سالوں پرانی ایک دوسرے پر الزام تراشی کرنے اور اپوزیشن کی جانب سے حکومت کا تختہ الٹانے کی کاوشوں کی سیاسی روایت کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔

اداکارہ ثمینہ پیرزادہ نے اپنے ٹوئٹ میں سوال پوچھتے ہوئے لکھا کہ ’کیا یہ جمہوریت ہے؟ ہم انتخابات کا انتظار کیوں نہیں کرسکتے۔‘

اُنہوں نے لکھا کہ ’پاکستانی عوام کو ہر پانچ سال بعد حکومت کے انتخاب کے لیے فیصلہ کرنے دیں۔‘

ثمینہ پیرزادہ نے مزید لکھا کہ ’میں اس سرکس سے تنگ آگئی ہوں۔‘

ثمینہ پیرزادہ کی رائے سے اتفاق کرتے ہوئے معروف پاکستانی صحافی نجم سیٹھی نے اپنے تبصرے میں لکھا کہ ’بالکل ٹھیک! اگر انتخابات آزاد اور منصفانہ ہوں تو ہمیں دھرنے اور اقامہ کو بے دخل کیے بغیر پانچ سال کی مدت کو تقدس دینا چاہیے۔‘

نجم سیٹھی نے مزید لکھا کہ ’اگر نہیں تو، پھر ہمیں ہائبرڈ حکومتوں اور کٹھ پتلی وزیر اعظم سے جلد از جلد چھٹکارا حاصل کرنا چاہئے!’

اپنا تبصرہ بھیجیں